ش۔وگر کا ع۔لاج صرف ایک قرآنی آیت کے ساتھ

انسان جب بیم۔اریوں سے عاج۔ز آجاتا ہے تو ڈاکٹر بھی اسے روحانی ع۔لاج کا مشورہ دیتے ہیں ۔اب تو بہت سے ہسپتالوں میں قرآن تھی۔راپی شروع ہوچکی ہے ۔کئی بار لوگوں کو اللہ کے کلام سے شفا پاتے دیکھا اور سنا ہے جن کا اب عقیدہ ہے کہ جو کام ادویات نہیں کرسکتیں وہ اللہ کا کلام سب سے بہتر کرتاہے اور یہ سب سے بہترین اور افضل عل۔اج ہے جس میں شفائے کاملہ موجود ہے ۔پچھلے دنوں ایک صاحب جو سرکاری ادارے میں اچھی پ۔وسٹ پر ہیں بتا رہے تھے کہ انہیں ج۔سم۔انی طور پر ن۔قاہت اور بے چی۔نی بہت ہونے لگی۔

تھکن ہر وقت سر پر س۔واررہتی جبکہ دفتر کا ک۔ام اتنا ح۔ساس ہے کہ اس میں غفل۔ت کی کوئی گ۔نجائش نہیں ۔انہوں نے اسکا ع۔لاج سورہ فاتحہ سے کیا ہے۔بتانے لگے کہ انہوں نے انتہائی پرسکون حالت میں پوری یک س۔وئی سے سورہ فاتحہ کو ٹھ۔ہر ٹھ۔ہر کر اکیس بار پڑھنا معمول بنایا اور چند ہفتوں بعد ان کے بدن اور دماغ میں چ۔ستی پیدا ہو ۔ان کا ہر کام میں دل لگتا ہے ۔ بلکہ ہر کام سے پہلے یا کسی بھی مص۔یبت میں مبتلا ہونے پر سورہ فاتحہ کا سہارا لیتے ہیں تو ان کی مشکل دور ہوجاتی ہے ۔ان کی بیٹی کا رشتہ نہیں ہورہا تھا جس کے لئے انہوں نے سورہ فاتحہ پڑھ کر اللہ سے دعا کی تو انتہائی معق۔ول رشتہ آگیا ۔ان کا ایمان ہے کہ سورہ فاتحہ کی برکت سے ان کی زندگی بدل گئی ہے ۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.