سکولز کالجز بند۔۔سرکاری دفاتر میں ملازمین کی حاضری سے متعلق بھی بڑا اعلان ،بچوں کے بعدسرکاری ملازمین کی بھی موجیں لگ گئیں

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)وفاقی حکومت نے کورونا کے بڑھتے کیسز پر تعلیمی اداروں،شادی ہالز ، ریسٹورنٹس پر پابندی پھرتاحکم ثانی پابندیاں لگا دیں ،پنجاب کے سات شہروں سمیت پشاور میں15 مارچ سے 28 مارچ تک تمام تعلیمی ادارے بند رہیں گے ،اسلام آباد کے تعلیمی ادارے بھی پندرہ مارچ سے بند ہو جائیں گے جبکہ جن اداروں میں امتحانات ہورہے ہیںوہ جاری رہے گا،دفاتر ، مارکیٹوں سمیت ہر شعبے میں کام کرنیوالے لوگوں سے ماسک سمیت تمام احتیاطی تدابیراختیارکرنے کی اپیل کی گئی ہے ۔مشیرصحت ڈاکٹر فیصل سلطان نےوفاقی وزیرتعلیم شفقت محمود کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے

ہوئے کہاکہ گزشتہ ہفتے سے کورونا وائرس کے باعث ہلاکتوں میں اضافہ ہورہا ہے اور نئے کیسز بھی بڑھ رہے ہیں اور ہسپتالوں پر بوجھ بڑھ رہا ہے ، انتظامیہ ادارے سمارٹ لاک ڈائون پر عمل کریں اور مائیکرولاک ڈائون بھی ضرورت کے مطابق لگایا جائے ،عوام ماسک کا استعمال لازمی کریں ۔ انہوں نے کہاکہ پچاس فیصد ورک پالیسی پر فوری عمل کیا جائے تفریحی مقامات شام چھ بجے بند کرنے پر تمام صوبوں میں اتفاق ہوا ہے ۔فروری میں کورونا کی صورتحال کنٹرول میں تھی تاہم اب یہ صورتحال خراب ہوتی نظر آرہی ہے جس کےباعث ماسک سمیت تمام احتیاطی تدابیر اختیارکی جائیں ۔انہوں نے کہاکہ گھر سے کام کرنے کی پالیسی پر عمل کیا جائےاور اس پر تمام صوبوں کا اتفاق بھی پایا جاتا ہے ۔شادی ہال سے متعلق پالیسی برقرار رہے گی ،موجودہ صورتحال دیکھتے ہوئے ریسٹورنٹس میں کھانے پر پابندی رہے گی ۔سینما،مزارات بھی بندرہیں گے،اجتماعات پرپابندی ہوگی ،اس دوران گفتگوکرتے ہوئے وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے کہاکہ ہم نے تعلیم کے تناظر میں دیکھا کہ بیماری کا پھیلائو کتنا ہے تقریبا پانچ کروڑ بچے کالجز اور یونیورسٹیز میں جاتے ہیں ۔سندھ ، بلوچستان میں

حالات تقریبا ٹھیک ہیں وہاں پر فیصلہ کیا گیا ہے کہ پچاس فیصد بچے روز آیا کریںگے اور سوشل فاصلے کے ساتھ اور ماسک کے ساتھ آئیں گے اور ایس او پیز پر عملدرجاری رہےگا ۔ پنجاب اور خیبرپختونخوا میں کہیں کہیں مسائل نظر آئے ہیں ،آزاد کشمیر میں بھی مسائل ہیں گلگت میں صورتحال ٹھیک ہے ۔سوموار سے پندرہ تاریخ سے بہار کی چھٹیاں شروع ہوجائیں گی اور وہ اٹھائیس مارچ تک رہیں گی اور ادارے اٹھائیس مارچ تک بند رہیں گے ،فیصل آباد ،گوجرانوالہ ،لاہور،گجرات ، ملتان ،راولپنڈی اور سیالکوٹ میں 15 مارچ سے 28مارچ تک بند رہیں گے ،اس فیصلے کا اطلاع اسلام آباد پر بھی ہوں گا اور وہ بھی سوموار سے بند ہوجائیں گے اور وہ اٹھائیس مارچ تک بند رہیں گےاس کے ساتھ ساتھ مظفر آباد کا فیصلہ وہاں کی حکومت کرلے گی

اور پشاور میں بھی اس فیصلے کا اطلاق ہو گا ۔باقی شہروں میں سلسلہ اسی طرح چلتا رہے گا لیکن صوبائی حکومتیں ان معاملات کا باریک بینی سے جائزہ لیتی رہیں گی اور جہاں حالات خراب ہوں گے وہاں سکول بند کردیں گے ۔ہم حالات کا بار بار جائزہ لیتے رہیں گے ۔جن سکولوں میں امتحانات ہورہے ہیں تووہ امتحان جاری رہیں گے اس پر پابندی کا امتحانات پر اطلاق نہیں ہوگا ۔یہ چند ایک فیصلے تھے جو آج ہم نے لئے ہیں میرا خیال ہے کہ سکولوں کواپنے طورپر بھی مانیٹرنگ کرنی چاہیے اور جہاں صورتحال خراب ہو تو وہ تعلیمی حکام کو اطلاع دیں ۔سات شہر پنجاب کے ہیں جہاں تعلیمی ادارے دو ہفتے کے لئے بند ہوں گے ۔تمام تعلیمی اداروں پر ان فیصلوں کا اطلاق ہوگا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.