پی ڈی ایم ٹوٹ گئی، پیپلزپارٹی اور اے این پی کواتحاد سے نکال دیا گیا

لاہور (ٹوڈے نیوز) پی ڈی ایم جماعتوں نے پیپلزپارٹی اور اے این پی کو اتحاد سے باہر نکالنے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے، پی ڈی ایم اسٹیئرنگ کمیٹی کے اجلاس میں پیپلزپارٹی اور اے این پی کو نہیں بلایا جائے گا، شاہد خاقان عباسی کی زیرصدارت اجلاس میں آئندہ کا لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔ ذرائع کے مطابق پی

ڈی ایم کی اسٹیئرنگ کمیٹی کا اجلاس شام کو طلب کرلیا گیا ہے۔اسٹیئرنگ کمیٹی کے اجلاس سیئرنائب صدر ن لیگ شاہد خاقان عباسی کی رہائشگاہ پر ہوگا۔ پی ڈی ایم اسٹیئرنگ کمیٹی اجلاس کی صدارت شاہد خاقان عباسی کریں گے۔ بتایا گیا ہے کہ پی ڈی ایم اتحاد میں شامل جماعتیں آئندہ کے لائحہ عمل پرغور کریں گی۔ اجلاس میں پیپلزپارٹی اور اے این پی کو نہ بلانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ پیپلزپارٹی کو پی ڈی ایم اتحاد سے باہر نکالنے کا حتمی فیصلہ مولانا فضل الرحمان کی زیرصدارت اجلاس میں کیا جائے گا۔جس کا باقاعدہ اعلان بھی صدر پی ڈی ایم کریں گے۔ اس سے قبل مسلم لیگ (ن) اور جے یو آئی ف نے سینیٹ میں یوسف رضا گیلانی کو قائد حزب اختلاف نہ ماننے

پر بھی اتفاق کیا ہے۔ مسلم لیگ (ن) کے رہنما شاہد خاقان عباسی نے جے یو آئی (ف) کے مولانا عبدالغفور حیدری سے ملاقات کی ، جس کے دوران شاہد خاقان عباسی نے مولانا فضل الرحمان کی خیریت دریافت کی اور سینیٹ میں قائد حزب اختلاف منتخب ہونے کے بعد کی صورت حال پر مشاورت کی۔دونوں رہنماؤں کے درمیان ہونے والی گفتگو کے دوران کہا گیا کہ پی ڈی ایم میں شامل تمام جماعتیں پیپلزپارٹی کے رویہ سے مایوس ہیں۔ دونوں سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں نے اس بات پر بھی اتفاق کیا کہ پی ڈی ایم میں شامل جماعتوں کو اپنا قائد حزب اختلاف لانے کے لئے حکمت عملی طے کرنی ہوگی۔اس موقع پر مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا کہ قائد حزب اختلاف کے معاملے میں پیپلزپارٹی نے باپ سے حمایت مانگ کر سب کو مایوس کیا ہے۔ شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ قائد حزب اختلاف سے متعلق پی ڈی ایم کی دیگر جماعتوں سے بھی جلد مشاورت کریں گے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.