پاکستانیوں کے لیے زبردست خوشخبری! سعودی عرب پاکستان میں کیا کام کرنا چاہ رہا ہے؟ عمران خان کو خصوصی دعوت دینے کی اصل وجہ سامنے آگئی

اسلام آباد (نیوز ڈیسک ) سعودی عرب نے پاکستان کو ماحولیات سے متعلق معاہدے کی پیشکش کر دی، سعودی عرب کے ساتھ ماحولیات سے متعلق4 اہم شعبوں میں شراکت داری کا معاہدہ کرنا چاہتا ہے، 10بلین ٹری سونامی منصوبہ اب سعودی عرب میں بھی شروع کیا جا رہا ہے۔ تفصیلات کے مطابق سعودی سفیر نواف

نواف المالکی اور معاون خصوصی ملک امین اسلم کے درمیان ملاقات ہوئی۔جس میں دوطرفہ تعلقات اور باہمی امور پر بات چیت کی گئی۔ اس موقع پرسعودی عرب نے پاکستان کو ماحولیات سے متعلق معاہدے کی پیشکش کی۔ سعودی عرب نے ماحولیات سے متعلق 4 اہم شعبوں میں شراکت داری کا معاہدہ کرنے کی پیشکش کی ہے۔ معاون خصوصی ماحولیات ملک امین اسلم نے کہا کہ سعودی عرب گرین انشیٹو میں پاکستان کو شراکت دار بنانا چاہتا ہے۔10بلین ٹری سونامی اب سعودی عرب میں بھی شروع کیا جا رہا ہے۔پاکستان اور سعودی عرب میں ماحولیاتی تحفظ کیلئے بھی معاہدہ کیا جائے گا۔ اس سے قبل وزیراعظم عمران خان نے بھی اپنے ٹویٹ میں کہا تھا کہ برادرِ عزیز عزت مآب ولی عہد محمد بن سلمان کے”سبز سعودی عرب” اور “سبز مشرقِ وسطیٰ” منصوبوں کے بارے میں جان کر میں مسرور ہوں۔ ہم معاونت کی پیشکش کر چکے ہیں کیونکہ

ان سے “سرسبز و شفاف پاکستان” اور “دس ارب درختوں” کے ہمارے منصوبوں کو جِلا ملتی ہے۔مزید برآں وزیراعظم عمران خان نے دی ٹائمز میں لکھے گئی اپنے ایک مضمون میں کہا کہ عالمی سطح پر تبدیل ہونے والی آب و ہوا میں پاکستان کا حصہ زیادہ نہیں، پاکستان عالمی کاربن کے اخراج کا ایک فیصد سے بھی کم اخراج کرتا ہے، ہم اپنی بڑھتی ہوئی معیشت کو سبز، کم کاربن والا صاف ماحول بنا کر عالمی حل کا حصہ بننے کے لئے پرعزم ہیں، میری حکومت کا ہدف ہے کہ 2030 تک، 60 فیصد ہماری توانائی کاربن فری ہوجائے۔عمران خان نے لکھا کہ کاربن جذب کرنے والے ایک لاکھ ہیکٹر جنگلات کی بحالی کا ہمارا ہدف ہے، ہمارے گرین پروگرام میں 2023 تک محفوظ علاقوں کی کوریج کو 15 فیصد اراضی اور 10 فیصد سمندری رقبے تک بڑھایا جانا شامل ہے، کوویڈ 19 وباء کے دوران ہم نے 7300 مربع کلومیٹر اراضی پر محیط 15 نئے قومی پارکس کا اعلان کیا، ہماری 30 فیصد ٹرانسپورٹ الیکٹرک ذرائع پر منتقل ہوگی، 2030 تک ہم انرجی مکس کا 60 فیصد کاربن سے پاک بنائیں گے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.