حکومت نے چینی کی قیمت حیرت انگیز حد تک کم کر دی، عوام میں سکون کی سانس۔

نیوز، لاہور: پاکستان کی حالیہ اشیاء خوردنوش کی چیزوں کی فراہمی کے لحاظ سے صورت حال کافی غور طلب ہے کیونکہ ملک میں شوگر اور آٹا مافیا سمیت مختلف گروہ سرگرم ہیں۔

اسی صورت حال سے نمٹنے کے لئے، پنجاب حکومت نے وزیراعلیٰ کے دفتر اور چیف سیکٹری کے دفتر میں قیمتوں کو کنٹرول کرنے کے حوالے سے مانیٹرنگ رومز قائم کئے ہیں۔
اس حکمت عملی کے تحت، صوبائی وزاء اور سیکرٹری بازاروں کے دورے کرینگے اور روزانہ کی بنیاد پر رپورٹ پیش کرینگے۔

حکومت کی طرف سے یہ بیانیہ بھی سامنے آیا ہے کہ صوبے میں چینی کا وافر اسٹاک موجود ہے اور اس طرح چینی کی قیمت میں کمی واقع ہو رہی ہے۔ جبکہ حکومت کی طرف سے بازاروں میں چینی کی مقررہ قیمت پر فروخت یقینی بنائی جائیگی۔ چینی کو مل سے خریدنے کی قیمت 80 روپے فی کلو ہے، جبکہ بازاروں میں 85 روپے فی کلو چینی بیچی جا رہی ہے۔

حکومت کی طرف سے رمضان بازار میں 65 روپے کلو چینی رعایتی نرخ پر بیچی جائے گی۔ رمضان بازار میں 3 سال پرانے نرخ پر اشیاء اور چیزیں فروخت کی جائیگی۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.