طلبا کو پروموٹ کرنے کا فیصلہ ۔۔ 9ویں ،11سمیت کون کون سے کلاسز کے طلبا و طالبات کو پروموٹ کیا جائےگا؟جانیے تفصیل

پاکستان میں عالمی وباء کورونا وائرس کے باعث 10 ویں اور 12 ویں جماعت کے امتحانات لینے جب کہ 9 ویں اور 11 ویں کے طلبہ کو پروموٹ کیے جانے کا امکان ہے۔ تفصیلات کے مطابق آئی بی سی سی کی اسٹیئرنگ کمیٹی کا اجلاس ہوا ، جس میں یہ تجویز زیر غور آئی کہ امتحانات کو مختصر کرنے کے لیے

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

لازمی مضامین کے بجائے اختیاری مضامین کے امتحان لیے جائیں ، اس موقع پر کہا گیا کہ سائنس کے زمرہ میں تو یہ ممکن ہے تاہم آرٹس میں اختیاری مضامین ہونے کے باعث مشکل ہوگی لہٰذا بہتر ہے کہ دسویں اور بارہویں کے امتحان لیے جائیں جب کہ نویں اور گیارہویں کے طلبہ کو بغیر امتحان اگلی کلاسوں میں بھیج دیا جائے ، اگر آئی بی سی سی اس تجویز پر متفق ہوگیا کہ دسویں اور بارہویں کے امتحان لیے جائیں تو پھر یہ معاملہ حتمی منظوری کے لیے بین الصوبائی وزرائے تعلیم کانفرنس میں بھیجا جائے گا اور وہاں سے منظوری کے بعد اس کا اطلاق پورے ملک میں کردیا جائے گا۔بتایا گیا ہے کہ اسٹیئرنگ کمیٹی کے آن لائن اجلاس کی صدارت چیئرمین اسٹیئرنگ کمیٹی ڈاکٹر ناظم جیوا نے کی ، اجلاس میں سیکرٹری آئی بی سی سی ڈاکٹر غلام علی ملاح ، چیئرمین انٹرمیڈیٹ بورڈ کراچی ڈاکٹر سعید الدین ، سرگودھا تعلیمی بورڈ کی چیئرپرسن ڈاکٹر کوثر رئیس

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

، کوہاٹ تعلیمی بورڈ کے چیئرمین ڈاکٹر شوکت حیات ، فیڈرل بورڈ کے چیئرمین ڈاکٹر قیصر عالم نے شرکت کی۔قبل ازیں وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود واضح کرچکے ہیں کہ اب کسی طالب علم کو مفت کے گریڈ نہیں ملیں گے بلکہ امتحانات ہوں گے ، انہوں نے کہا کہ گزشتہ سال بچوں کو بغیر امتحان کے پاس کیا گیا تھا لیکن اب امتحانات کے بغیر گریڈ نہیں دیے جائیں گے کیوں کہ اس طرح پڑھے لکھے بچوں کی محنت ضائع ہوتی ہے ، ہماری کوشش ہو گی کہ جو بچے امتحان دیں ان کو داخلہ مل جائے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.