شرط لگا لیں، ہر بچہ A+گریڈ لے کر پاس ہوجائے گا اس سال نویں دسویں کے پرچوں میں کیا کچھ آنے والا ہے طلبا اوراساتذہ کے کام کی خبر آگئی

وزیر تعلیم سندھ نے آمدہ امتحانوںہی طلبا کو بہت بڑی خوشخبری سنا دی ہے۔

جولائی میں ہونے والے نویں اور دسویں جماعت کے امتحانات کےلئے انتہائی آسان پیپر پیٹرن متعارف کروا دیا گیا ہے۔وزیرتعلیم سندھ نے پیپر کی بناوٹ کا ماڈل شئیر کرتے ہوئے بتایا ہے کہ پرچوں میں 50نمبر کثیر الانتخابیجوابات (ایم سی کیوز ) 30نمبر طویل جوابات(لانگ آنسرز ) جبکہ 20نمبر مختصرجوابات(شارٹ آنسرز) کے دیے جائیں گے۔ واضح رہے کہ

وفاق اورصوبوں کی مشترکہ پالیسی کے تحت صرف اختیاری مضامین کے ہی پرچے لیے جائیں گے۔ جبکہ ان پرچوں کےلئے بھی صرف 40فیصد نصاب شامل کیا گیا ہے۔جوابات (ایم سی کیوز ) 30نمبر طویل جوابات(لانگ آنسرز ) جبکہ 20نمبر

مختصرجوابات(شارٹ آنسرز) کے دیے جائیں گے۔ واضح رہے کہ وفاق اورصوبوں کی مشترکہ پالیسی کے تحت صرف اختیاری مضامین کے ہی پرچے لیے جائیں گے۔ جبکہ

ان پرچوں کےلئے بھی صرف 40فیصد نصاب شامل کیا گیا ہے۔کار 7.15 سے 11.15 تک ہوں گے جب کہ میٹرک اور انٹرمیڈیٹ کے اوقات کار 7.15 سے 11.45 تک ہوں گے ، نرسری سے مڈل تک طلبا کے اسکول کے اوقات کار 7.30 سے 11.30 تک ہوں گے جب کہ

میٹرک اور انٹرمیڈیٹ کے طلبا کی کلاسز 7.30 سے 12 بجے تک ہوں گی تاہم کلاسز کے دوران کوئی بریک نہیں ہو گی لیکن اب سکولز کے اوقات کار کی تبدیلی کا فیصلہ تبدیل کرتے ہوئے مذکورہ نوٹیفکیشن بھی واپس لے لیا گیا۔دوسری جانب وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے کہا ہے کہ امتحانات 10جولائی کے بعد

شروع ہوں گے، دسویں کے امتحانات چار مضامین اور بارہویں کے امتحانات صرف اختیاری مضامین میں ہوں گے۔ دسویں اور بارہویں کے بعد اب نویں اور گیارہویں جماعتکی بھی کلاسیں شروع کرنے کی اجازت دے دی گئی ہے۔ یہ فیصلہ حتمی ہے، اس میں مزید کوئی تبدیلی نہیں کی جائے گی۔ وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود کی

زیرصدارت بین الصوبائی وزراتعلیم کانفرنس کا انعقاد ہائرایجوکیشن کمیشن میں ہوا۔ کانفرنس کے بعد میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے کہا کہ یہ بات درست ہے کہ ملک سےابھی کورونا وائرس ختم نہیں ہوا ہے۔ طلباء کے جائز مطالبات پرغور کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے پہلے ہی اس بات کا اعلان کر دیا تھا کہ بغیر امتحانات

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *