گرج چمک کے طوفان کہاں موجود ہیں؟ اگلے چند گھنٹوں میں کہاں کہاں موسلادھار بارشوں کا امکان ہے؟ٹھنڈی ٹھنڈی خبر آگئی

اسلام آباد گرج چمک کے طوفان کہاں موجود ہیں؟ اگلے چند گھنٹوں میں کہاں کہاں موسلادھار بارشوں کا امکان ہے؟ٹھنڈی ٹھنڈی خبر آگئی۔۔

گرجچمک کے طوفان اس وقت سرگودھا ، جھنگ ، فیصل آباد اور ڈیرہ غازیخان پر موجود ہیں 80 سے 100 کلو میٹر فی گھنٹہ کی آندھی کے ساتھ تیز بارش کاباعث بن رہے ہیں اور مشرق کی طرف بڑھ رہے ہیں ۔ اگلے ایک گھنٹہ تک خانیوال ، چنیوٹ اور ساہیوال کے متاثر ہونے کے امکانات ہیں

۔”پورا ہفتہ بارشیں؟ گرج چمک کے طوفان اور پری مون سون بارشوں کا سلسلہ جاری رہے گا، شہریوں کو خوش کر دینے والی پیشنگوئی“  ویدر بسٹرز پاکستان کے مطابق ملک بھر کی پیشگوئی (اگلے 7 دن): رواں ہفتے موسمی سرگرمیاں رونما ہوتی رہیں گی۔ پاکستان بھر میں چند مقامات پر یا کہیں کہیں گرج چمک کے طوفان بننے اور پری مون سون بارشوں کا سلسلہ جاری رہیگ

اصل مون سون اب دیر سے آئے گی۔رواں ہفتے مغربی ہواؤں کے کم از کم 3 سلسلے متاثّر کرینگے، جن کے سبب چند مقامات پر یا کہیں کہیں گرج چمک کیساتھ بارش اور ساتھ مٹّی کے طوفان متوقع ہیں۔ آسمانی بجلی گرنے کے اندیشے کے علاوہ ژالہ باری کا خدشہ بھی ہوگا۔ ہفتے کے اختتام تک شمالی علاقہ جات میں درجہ حرارت اضافے کیساتھ معمول کے قریب پہنچ جائیں گے۔ تاہم

بلوچستان میں معمول سے انتہائی کم درجہ حرارت کا روجھان برقرار رہیگا۔پنجاب کے زیادہ تر علاقوں، کشمیر، خیبر پختونخواہ، سندھ اور مشرقی اور شمال مشرقی بلوچستان۔ اگلے 7 دنوں میں خیبر پختونخواہ اور پنجاب، آزاد کشمیر کے تمام علاقوں بشمول ایبٹ آباد، ہریپور، صوابی، اٹک، چکوال، راولپنڈی، اسلام آباد، لاہور، گوجرانوالہ، سرگودھا، بھکّر، میرپور، مظفّرآباد، ڈی جی خان اور ملحقہ اضلاع میں چند مقامات پر یا کہیں کہیں گرج چمک کے طوفان 3 سے 4 مرتبہ متاثّر کر سکتے ہیں

منگل کی دوپہر یا شام سے بدھ کی صبح تک بارش کے امکانات سب سے زیادہ ہیں۔ جمعرات کی شام دوبارہ بارش کے امکانات ان علاقوں میں روشن ہونگے۔ ہلکی شدّت کے مٹّی کے طوفان آ سکتے ہیں جن میں ہواؤں کی رفتار 70 سے 90 کلومیٹر فی گھنٹہ تک پہنچ سکتی ہے۔ گرج چمک کےطوفان کے دوران کئی جگہوں پر ژالہ باری کا بھی امکان ہے۔ اگلے 7 دنوں میں

جنوبی خیبر پختونخواہ، جنوبی پنجاب اور شمال مشرقی بلوچستان میں کہیں کہیں کم از کم 2 سے 3 گرد یا گرج چمک کے طوفان کے سلسلے متاثّر کر سکتے ہیں۔ شمال مشرقی بلوچستان کے علاقوں بشمول بارکھان، کوہلو، ژوب، لورالائی، سبّی، ڈیرہ بگٹی اور نصیرآباد جبکہ ڈی جی خان ڈی آئی خان، بنّوں، لکّی مروت، بھکّر، ملتان، ساہیوال، بہاولپور، رحیم یار خان، خضدار، لسبیلہ اور ملحقہ اضلاع میں تیز بارش کیساتھ ساتھ شدید ژالہ باری بھی ہو سکتی ہے۔سندھ میں

لاڑکانہ، دادو، نوابشاہ، سکّھر، کشمور، گھوٹکی، قمبر شہدادکوٹ، جامشورو اور حیدرآباد کے علاقوں میں بھی درج بالا موسمی صورتحال رونما ہو سکتی ہے۔ وسطی سندھ میں امکانات کم ہیں تاہم نوشہرو فیروز اور نوابشاہ کے علاقوں میں بھی پیچھے بنے گرج چمک کے طوفانوں سے مٹّی کے طوفان آ سکتے ہیں۔ کیرتھر کے پہاڑوں کے قریبی علاقوں میں باالخصوص ژالہ باری ہو سکتی ہے

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.