حکومت نے آٹے اور اسکی اشیاء پر ٹیکس ختم کر دیا

اسلام آباد(آن لائن) وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین نے کہا ہے کہ ہمارےپاس ڈیڑھ کروڑ ٹیکس

نادہندگان کا ڈیٹا آگیا ہے، جو لوگ ٹیکس نہیں دیتےانہیں ٹیکس نیٹ میں لائیں گے ، ٹیکس پیئر کیلئے ایف بی آر آڈٹ تیسریپارٹی کرے گی،ٹیکس چور وں کے خلاف قانونی کاروائی کی جائے گی،

5 منٹ سے اوپر کالز پر 75 پیسے ٹیکس لگایا جائے گا جبکہ موبائل فون اور انٹرنیٹ پر ٹیکس کا فیصلہ واپس لے لیا ہے ۔ کم آمدنی والے طبقے کو ٹارگیٹڈ سبسڈی دیں گے۔ایف بی آر کو شہریوں کو ہراساں نہیں کرنے دیں گے۔

جمعہکو قومی اسمبلی میں بجٹ بحث سمیٹتے ہوئے وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین نے کہا کہ پی ٹی آئی حکومت کے پاس آئی ایم ایف کے پاس جانے کے علاوہ کوئی چارہ نہیں تھا کیونکہ

قرضہ 26 ہزار ارب تھا آئی ایم ایف نے سخت شرائط رکھی سال 2018-19 میں عمران خان نے مشکل فیصلے کئے کرونا کے باوجود کنسٹرکشن انڈسٹری اور صنعت کو بڑھاوا دیا جس سے کرونا کے باوجود گروتھ ریٹ بڑھا پوری دنیا 2.5 فیصد

معیشت پر کھڑی تھی لیکن پاکستان کی گروتھ 4 فیصد پر گئی آئی ایم ایف کہ رہی تھی کہ 2.5 فیصد پر جی ڈی پی جائے گی کرونا کی وجہ سے لیکن خدا کے فضل سے

گروتھ ریٹ بڑھ گئی اور اس گروتھ روٹ کو غریب آدمی کو دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔بلا سود قرضے گھروں کیلئے دینے کا فیصلہ کسان کو 2.5 لاکھ روپے قرضہ بلا سود دیا جائے گا سے کم گاڑی پر

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.