بجلی و گیس کی لوڈشیڈنگ حکومت کی بڑی غفلت کا انکشاف

کراچی پاکستان مسلم لیگ(ن)سندھ کے جنرل سیکرٹری اور سابق وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے کہاہے کہ پلانٹس کی 6 ماہ

پہلے مرمت کرلیتے، آج ملک میں بجلی و گیس کی لوڈشیڈنگ نہ ہورہی ہوتی۔خصوصی گفتگو کرتے ہوئے مفتاح اسماعیل نے کہا کہ حماد اظہر کیوں غلط بیانی کررہےہیں، بحث میں مزہ اس وقت آئے گا جب دونوں حقائق پر مبنی بات کریں۔انہوں نے کہا کہ آپ لوگ 3 سال سے موجود ہیں،

پائپ لائن آپ لوگوں نے نہیںبڑھائی، آپ لوگ مہنگا فرنس آئل لے رہے ہیں، مہنگی بجلی دے رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ انہوں نے لوکل انڈسٹریز کی گیس بند کردی ہے، آپ نے آخری وقت پر پوچھا، جس پر قطر نے منع کردیا، آپ آج گیارہ بارہ ڈالر کی گیس خرید رہے ہیں۔مفتاح اسماعیل نے کہا کہ ان کے پاس لانگ ٹرم کا کوئی معاہدہ نہیں،

ہم نے 13.3 فیصد کا گیس کا معاہدہ کیا، آپ مجھے کوئی ایک لانگ ٹرم پراجیکٹ دکھادیں، 10.4 فیصد کے معاہدے پر گیس آج تک نہیں آئی، آپ نے لانگ ٹرم کنٹریکٹ کیا ہی نہیں ہے۔سابق وزیر خزانہ نے کہا کہ ہم بار بار کہتے ہیں کہ ایل این جی لے کر آئیں، آپ شارٹ ٹرم معاہدے

سے گیس لارہے ہیں، آپ جہاں سے بھی گیس خریدرہے ہیں وہ مہنگی لے رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ فرنس آئل بھی اس وقت مہنگا خرید رہے ہیں، جو پلانٹس گیس اور فرنس آئل پر چل سکتے تھے، انہوں نے ڈیزل پر چلائے، ڈیزل پر پلانٹس چلانے سے 20 روپے کا یونٹ پڑتا ہے۔مفتاح اسماعیل نے کہا کہ سب سے سستی بجلی نواز شریف کے تھرمل پلانٹس کی لگائی ہوئی ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.