اگر ہم چاہیں تو دو ہفتوں میں افغانستان کا کنٹرول سنبھال سکتے ہیں،افغان طالبان

افغان طالبان نے کہا ہے کہ امریکا ناکامی کے بعد

مذاکرات پر راضی ہوا۔ انہوں نے دعوی کیا ہے کہ افغانستان کے 245 اضلاع پر کنڑول حاصل کر لیا ہے۔افغان طالبان نے کہا ہے کہ اگر ہم چاہئیں تو 2 ہفتوں میں افغانستان

کا کنٹرول سنبھال سکتے ہیں۔افغانستان میں کئی دارالحکومتوں کا محاصرہ جاری ہے، افغان سرزمین کسی دوسرے ملک کے خلاف استعمال نہیں کی جائے گی۔ہمارا مقصد افغانستان کو غیرملکی تسلط سے ا?زاد کرانا تھا ، دوسرے

ممالک افغانستان کے معاملات میں مداخلت سے گریزکریں،تمام فریقین سے تشدد میں کمی کا مطالبہ کرتے ہیں۔ ذرائع ابلاغ کی رپورٹس کے مطابق شہاب الدین دلاور کی سربراہی میں طالبان وفد نے روسی مندوب برائے افغانستان

ضمیر کابلوف سے ملاقات کی ہے۔ملاقات میں افغانستان کی تازہ صورتحال اور امن عمل پر تفصیلی گفتگو ہوئی۔ روسی دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ افغانستان اور تاجکستان کے سرحدی علاقوں پر طالبان نے کنڑول

حاصل کرلیا ہے۔ دفتر خارجہ نے کہا تاجکستان کے دو تہائی حصے پر طالبان کا کنٹرول ہے۔ انھوں نے مزید بتایا کہ افغانستان، تاجکستان سرحد کے قریب کشیدگی بڑھ گئی ہے۔ ہم تمام فریقین سے تشدد میں کمی کا مطالبہ کرتے ہیں

۔شہاب الدین دلاور کی سربراہی میں طالبان وفد نے روسی مندوب برائے افغانستان ضمیر کابلوف سے ملاقات کی ہے۔ملاقات میں افغانستان کی تازہ صورتحال اور امن عمل پر تفصیلی گفتگو ہوئی۔ طالبان وفد نے کہا کہ افغانستان کی سرزمین کسی بھی ملک کے خلاف استعمال نہیں کی جائے گی۔روس میں افغان

طالبان نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ امریکا نے طالبان پر جنگ مسلط کی پھر ناکامی کے بعد مذاکرات پر راضی ہوا۔انھوں نے کہا کہ ہم دہشت گرد نہیں ا?زادی پسند ہیں۔ افغان طالبان نے کہا ہے کہ افغانستان کے معاملات میں دوسرے ممالک مداخلت سے گریزکریں۔دوسری جانب جوزجان صوبے سے تعلق رکھنے والی ایک افغان خاتون صحافی نے اپنی شناخت ظاہ

ر نہ کرتے ہوئے بتایا کہ ملک میں کوئی عورت بھی واقعتا زمینی لڑائی نہیں چاہتی ہے تاہم ہم صرف اپنے سادہ ترین حقوق کے طالب ہیں مثلا میں تشدد سے دور رہتے ہوئے اپنی تعلیم مکمل کر لوں تاہم حالات نے ہ

میں ایسا کرنے پر مجبور کر دیا،میں نہیں چاہتی کہ ملک ایسے لوگوں کے زیر کنٹرول ہو جو خواتین کے ساتھ دہشت ناک طریقے سے پیش آتے ہیں لہذا اس واسطے ہم نے ہتھیار تھام لیے کہ اپنی لڑنے کی صلاحیت باور کرا دیں ،

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.