نوٹ کہیں جعلی تو نہیں؟ جانیں وہ 5 طریقے کون سے ہیں جن سے باآسانی کرنسی نوٹ کی پہچان ہو سکتی ہے؟

ویسے تو کرنسی نوٹ ہمیشہ ہی سے اہمیت کے حامل رہے ہیں مگر یہی کرنسی نوٹ اس وقت آپ کے لیے مشکلات کھڑی کر سکتا ہے جب کوئی آپ کو جعلی کرنسی

نوٹ تھما کر بے وقوف بنا دے۔ آج آپ کو جعلی کرنسی نوٹ کی کچھ نشانیاں بتائیں گے جن سے ہو سکتا ہے آپ کو بھی فائدہ ہو جائے۔کرنسی نوٹ کافرنٹ حصہ:کرنسی نوٹ کے فرنٹ حصے پر قائداعظم کی تصویر موجود ہوتی ہے جو کہ واٹر مارک پورٹریٹ ہوتا

ہے۔ یہ تصویر کرنسی نوٹ کے سیدھی طرف موجود ہوتی ہے۔ اگر قائداعظم کی یہ تصویر سیدھی طرف موجود نہیں ہے تو عین ممکن ہے کوئی آپ سے جعلسازی کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔کرنسی نوٹ پر موجود ابھری ہوئی لکیر:اکثر اوقات ہم دیکھتے ہیں کہ جب کوئی بڑا نوٹ دکاندار لیتا

ہے تو اسے ہاتھ کی انگلیوں سے محسوس کرتا ہے، اس نوٹ پر موجود ابھری ہوئی لائنوں کو محسوس کرتا ہے۔ یہ ابھری ہوئی لائنیں دراصل کرنسی نوٹ کے اصلی نوٹ ہونے کی گواہی دیتی ہیں۔اسٹیٹ بینک کی سیل:ہر

کرنسی نوٹ پر اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی سیل موجود ہوتی ہے جو اس نوٹ کے اصلی ہونے کی گواہی دیتی ہے۔سیکیورٹی تھریڈ:۔سیکیورٹی تھریڈ کرنسی نوٹ کے

اصلی ہونے کی سب سے بڑی دلیل ہوتا ہے۔کرنسی نوٹ کا پیپر:کرنسی نوٹ کا کاغذ عام کاغذوں کے مقابلے میں کافی اچھا ہوتا ہے، یہی وجہ ہے کہ باآسانی جعلی نوٹ

کی پہچان ہو سکتی ہے۔ مزید خبروں تبصروں تجیزوں اور کالمز پڑھنے اور ہر وقت چوبیس گھنٹے اپ ڈیٹ رہنے اور ملک کے حالات سے با خبر رہنے کیلئے ہمارا پیج لائیک اور شیئر ضرور کریں اور اپنے دوستوں سے بھی شیئر کی درخواست کریں ہم آپ کے بے حد مشکور ہوں گے شکریہ

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *