افغان صدر کی درخواست پر پاکستان میں ہونیوالی افغان امن کانفرنس ملتوی ہو گئی

افغان صدر اشرف غنی کی درخواست پر پاکستان میں افغان امن کانفرنس ملتوی کردی گئی۔ذرائع کے مطابق تین روزہ

کانفرنس کا آغازآجہفتہ سے ہونا تھا تاہم افغان صدر اشرف غنی کی درخواست پر ملتوی کی گئی۔ پاکستان نے 17، 18 اور 19 جولائی کو افغان امن کانفرنس کا انعقاد کرنا تھا جسمیں شرکت کے لئے افغان طالبان کو

دعوت نہیں دی گئی تھی۔ اشرف غنی نے کہا کہ وہ زیادہ جامع وفد مزاکرات میں بھیجنا چاھتے ہیں ہم زیادہ تیاری سےکانفرنس میں شرکت کرنا چاھتے ہیں، اس لیے کانفرنس کو ابھی ملتوی کیا جا ئے۔اس کانفرنس کا مقصد

افغانستان میں امن عمل کو آگے بڑھانا ہے۔ ترجمان دفترخارجہ نے کہا ہے کہ کانفرنس کی نئی تاریخوں کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔کانفرنس میں افغانستان کی اعلیٰ قومی مصالحتی کونسل کے چیئرمین عبداللہ

عبداللہ اور افغان وزیرخارجہ حنیف اتمر کو بھی مدعو کیا گیا تھا جبکہ گلبدین حکمتیار سمیت اہم افغان شخصیات نے شریک ہونا تھا۔کانفرنس میں شرکت کے لئے

30 افغان رہنماؤں کو دعوت دی گئی جن میں سابق صدر حامد کرزئی، سیاف، عمرداود زئی، قانونی، نذیر احمد زئی، اسماعیل خان، واحدی، ولی محسود، خلیلی، محقق، منصورنادری، جنرل مراد، شفیع نورستانی، حامد گیلانی، جرات، فوزیہ کوفی، احمد ضیامسعود، ذخیلوال، یاسینی اور عادل فہیم شامل ہیں۔‎

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.