روپے نے امریکی کرنسی کو اوقات یاد کرادی۔۔ ڈالر کی قیمت میں 12روپے کمی, شاندار خبر

روپے نے امریکی کرنسی کو اوقات یاد کرادی۔۔ ڈالر کی قیمت

میں 12روپے کمی, شاندار خبر آگئیاسلام آباد)رواں مالی سال، ڈالر تقریباً 12 روپے سستا ہواکاروباری ہفتے کے اختتام پر انٹر بینک تبادلہ مارکیٹ میں ڈالر کیقدر 155 روپے 74 پیسے ہے۔انٹر بینک تبادلہ مارکیٹ میں آج بھی ڈالر کی قدر میں کمی دیکھنے میں آئی ، جو گزشتہ روز

کے مقابلے میں 17 پیسے کم رہا۔گزشتہ مالی سال میں ڈالر کی قدر 167 روپے 66 پیسے تھی جو آج انٹر بینک مارکیٹ کے اختتام پر 155 روپے 74 پیسے رہی۔تفصیلات کے مطابق ڈالر کی قیمت میں ایک ہی دن میں بڑی کمی واقع ہوئی ہے، جس سے روپیہ مزید تگڑا ہو گیا اور انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر 98 پیسے

ستا ہو گیا۔ انٹربینک میں ڈالر ایک سال کی کم ترین سطح پر 155 روپے 74 پیسے پر بند ہوا۔جس کے بعد اوپن مارکیٹ میں بھی ڈالرکی قیمت میں کمی ریکارڈ کی گئی ۔ اوپن ماکیٹ میں بھی ڈالر کی قیمت میں 40 پیسے کمی آئی، جس سے ڈالر کی قیمت 156.40 روپے ہو گئی۔ ڈالر کی قیمت میں

ایک ہی دن میں بڑی کمی پر معاشی ماہرین کا کہنا ہے کہ گزشتہ برس اگست سے اب تک انٹربینک میں ڈالر 12 روپے 69پیسے سستا ہوچکا ہے۔اور سات ماہ میں انٹربینک میں ڈالر168.43 روپے 43 پیسے کی بلند سطح سے اب تک سستاہوکر155 روپے 74 پیسے کا ہوگیا ہے۔ڈالر کی قیمت میں بڑی کمی کی وجہ وزیراعظم عمران خان کی جانب سے

شروع کیے گئے روشن ڈیجیٹل اکاونٹ منصوبے میں ساڑے پانچ ماہ میں اب تک 67 کرو ڈالر جمع ہونا قرار دیا گیا ہے۔رواں مالی سال 8 ماہ میں ترسیلات زر 18 ارب 70 کروڑ ڈالر نے سے روپے پر دباو میں کمی ہوئی ہے۔قبل ازیں ایک رپورٹ میں بتایا گیا کہ پاکستان کی مسلسل بڑھتے ہوئی ایکسپورٹس اور ترسیلات زر ڈالر کی قیمت

میں کمی کا باعث بن رہی ہیں۔رواں مالی سال کے دوران اب تک کرونا بحران کے باوجود پاکستان کی ایکسپورٹس اور ترسیلات زر میں ریکارڈ اور اربوں ڈالرز کا اضافہ ہوا ۔ امکان ظاہر کیا جا رہا تھا کہ رواں مالی سال کے اختتام تک پاکستان اپنی تاریخ میں پہلی مرتبہ ایکسپورٹس اور ترسیلات زر کی مد میں 50 ارب ڈالرز کا

زرمبادلہ حاصل کر لے گا۔ایک سال کے دوران اتنی ریکارڈ تعداد میں زرمبادلہ حاصل ہونے کی صورت میں پاکستانی روپے کی قدر میں یقینی طور پر اضافہ ہو گا، جس کے نتیجے میں امریکی ڈالر کی قدر میں مزید کمی آئے گی۔ امریکی ڈالر کی قدر میں کمی آنے کی صورت میں ناصرف ملک میں مہنگائی کی شرح میں کمی آئے گی، بلکہ حکومت پر بیرونی ادائیگیوں کا بوجھ بھی کم ہوگا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.