بارشوں کا طاقتور سسٹم کہاں کہاں برسنے والا ہے؟ پیشنگوئی نے ہلچل مچادی

پشاور آج رات دیر گئے سے خیبرپختونخوا کے

وسطی علاقوں میں زبردست بادل بنیں گے جو کوہاٹ ہنگو ٹانگاور ملحقہ علاقوں میں زبردستبارش برساتے ہوئے تھل کے علاقوں میں داخل ہوں گے جہاں میانوالی خوشاب اور گردونواح میں موسلادھار بارش برسانے کے بعد کچھ کمزور شدت کے ساتھ جنوبی پنجاب میں داخل ہوں گےاس دوران ملتان مظفرگڑھ لودھراں بہاولنگر

بہاولپور دنیاپور خانیوال اور گردونواح میں کہیں کہیں بارش برسائیں گے۔اس دوران ڈیرہ اسماعیل خان کے علاقوں میں بھی بارش ہوسکتی ہے ۔ جبکہ آج سے بارشوں کا پھیلاؤپنجاب کے مزید علاقوں میں بڑھے گا بالائی شمالی پنجاب میں موسلادھار بارشیں متوقع ہیں۔ اسکے علاقوں وسطی پنجاب میں بھی

آج رات یا کل سے یکم اگست تک زبردست بارشیں ہوں گی ۔جنوبی پنجاب آج سسٹم کا پھیلاؤ جنوبی پنجاب علاقوں میں بڑھے گا لیکن کل سے جنوبی پنجاب کے تمام علاقوں میں اچھی بارشوں کا امکان ہے۔۔ان ہفتوں کے دوران تربیلا جھیل میں 57 فٹ جبکہ منگلا جھیل میں 23 فٹ پانی کا اضافہ ہوا۔انہوں نے بتایا کہ

دونوں جھیل میں مقرہ ہدف سے کئی زیادہ کم پانی ہے تاہم ارسا کا ماننا ہے کہ یہ صورتحال بہت بہتر ہے جو گزشتہ 3 ہفتوں کے دوران سامنے آئی اور بارش کے آئندہ اسپیل سے امید کے مطابق چیزیں بہتر ہوسکتی ہیں۔ارسا کے خالد ادریس رانا نے بتایاکہ موجودہ صورتحال اس مہینے کے آغاز سے کہیں بہتر ہے۔اتھارٹی کے

پاس 4 لاکھ 24 ہزار 900 کیوسک پانی کی آمد تھی جو اس نے نظام میں جاری 3 لاکھ 12 ہزار کیوسک کے مقابلے میں کی تھی۔انہوں نے کہا کہ تاہم صورتحال اتنی اچھی نہیں ہے جس کے بارے میں موسمیاتی حکام نے پیش گوئی کی تھی۔خالد ادریس رانا نے کہا کہ دونوں دریاؤں جہلم اور چناب میں 3 لاکھ کیوسک پانی کی

پیش گوئی کی گئی تھی لیکن ہمیں اصل میں جہلم میں ڈیڑھ لاکھ کیوسک اور چناب میں ایک لاکھ 39 ہزار کیوسک پانی ملا۔تاہم اب صوبوں کو اپنی ضرورت سے 26 فیصد زیادہ پانی مل رہا ہے۔سندھ کو ایک لاکھ 60 ہزار کیوسک، پنجاب کو ایک لاکھ 35 ہزار کیوسک،

بلوچستان کو 14 ہزار کیوسک اور خیبر پختونخوا کو 3 ہزار 100 کیوسک پانی ملا۔انڈس ریور سسٹم اتھارٹی (ارسا) کے مطابق مجموعی طور پر (یکم اپریل سے 20 جولائی) پانی کی قلت میں 12 فیصد کمی آئی ہے

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.