وزیراعظم ہائوس کو یونیورسٹی بنانے کی بجائے کرائے پر دینے کا فیصلہ کر لیا گیا

اسلام آباد)حکومت نے وزیراعظم ہاؤس کو

یونیورسٹی کے بجائے آمدن کا مستقل ذریعہ بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔وزیراعظم ہاؤس کی عمارت ابکرائے پر حاصل کی جاسکے گی۔وزیراعظمہاؤس میں اب فیشن اور ثقافت کی تقریبات ہوں گی۔وفاقی کابینہ کے ایجنڈے میں

شامل تجویز کے مطابقوزیراعظم ہاؤس میں مقامی اور عالمی فوڈ، فیشن، ثقافتی تقریبات اور ونٹیج گاڑیوں کی نمائش کرائی جائے گی۔اعلیٰ سطح کی سفارتی تقریبات اور سیمینارزبھی وزیراعظم ہاؤس میں ہوں گے، پرائم منسٹر ہاؤس کے تجارتی استعمال کیلئے دو

کمیٹیاںبھی تشکیل دے دی گئیں جو سیکیورٹی اور ڈسپلن برقرار رکھنے کی ذمہ دار ہوں گی۔——-وزیراعظم ہائوس کو یونیورسٹی بنانے کی بجائے کرائے پر دینے کا فیصلہ کر لیا گیاانٹرویو سے متعلق تھیں۔ وزیر اعظم سے شرف ملاقات حاصل کرنے والوں میں

دو مضبوط ترین امیدواروں بیرسٹر سلطان محمود چوہدری اور سردار تنویر الیاس خان کے علاوہ مظفر آباد سے تعلق رکھنے والے خواجہ فاروق احمد اور نو منتخب رکن قانون ساز اسمبلی اظہر صادق بھی شامل تھے۔ ذرائع کے مطابق

اب تک طے پانے والی انڈر اسٹینڈنگ کے مطابق سردار تنویر الیاس کو وزیر اعظم آزاد کشمیر، جبکہ ان کے مضبوط ترین حریف سابق وزیر اعظم بیرسٹر سلطان کو

صدارت کا منصب دیا جائے گا۔دوسری جانب آزاد جموں کشمیر قانون ساز اسمبلی کا اجلاس اسپیکر اسمبلی شاہ غلام قادر کی صدارت میں ہوا جس میں نو منتخب اراکین نے حلف اٹھا لیا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.