کابل میں امریکی خاتون رپورٹر نے برقع پہن لیا

کابل: افغانستان کے دارالحکومت کابل میں امریکی ٹی وی کی خاتون رپورٹر نے برقع پہن لیا

۔تفصیلات کے مطابق افغانستان کے دارالحکومت کابل پر طالبان کے قبضے کے بعد سی این این کی رپورٹر کلاریسا وارڈ نے بھی برقع پہن لیا۔سی این این کی رپورٹر کلاریسا وارڈ کابل کی گلیوں میں باپردہ رپورٹنگ کرتی نظر آئیں جس کا منظر دنیا بھر میں دیکھا گیا۔خاتون رپورٹر

کی طالبان کے آنے سے قبل اور پرانی تصویر بھی لوگ ٹویٹ کررہے ہیں۔واضح رہے کہ کابل پر قبضے اور افغانستان کے بیشتر حصے پر عملداری قائم کرنے کے بعد طالبان نے عالمی برادری کے ساتھ مل کر چلنے کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔طالبان سیاسی دفتر کے ترجمان

محمد نعیم نے خلیجی خبر رساں ادارے الجزیرہ کو دیے گئے انٹرویو میں کہا کہ افغانستان میں جنگ ختم ہوگئی، اب ملک میں نئے نظام حکومت کی شکل جلد واضح ہوجائے گی۔ان کا کہنا تھا کہ آج طالبان کو 20 سال کی جدوجہد اور

قربانیوں کا پھل مل گیا، طالبان کسی کو نقصان پہنچانا نہیں چاہتے، تمام افغان رہنماؤں سے بات چیت کے لیے تیار ہیں اور ہر قدم ذمہ داری سےاٹھائیں گے، طالبان عالمی برادری کے تحفظات پر بات چیت کے لیے تیار ہیں۔طالبان ترجمان کا کہنا تھا کہ

کسی کو بھی افغانستان کی سر زمین کسی کے خلاف استعمال کرنےکی اجازت نہیں دی جائے گی، طالبان کسی اور ملک کے معاملات میں مداخلت نہیں کریں گے اس لیے چاہتے ہیں کوئی دوسرا ملک بھی ہمارے معاملات میں مداخلت نہ کرے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.